نیشنل ٹی ٹوئنٹی کپ میں پاکستان کو حفیظ کا متبادل مل گیا۔۔ اپنی گھومتی گیندوں سے اچھے اچھوں کو پریشان کر دیا

نیشنل ٹی ٹونٹی کپ کے دوسرے سیمی فائنل میچ میں سینٹرل پنجاب نے سندھ کو شکست سے دوچار کردیا اور فائنل میں جگہ بنا لی۔

دوسرے سیمی فائنل میں سندھ نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوۓ مقررہ اوورز میں صرف 141 رنز بناۓ۔ سینٹرل پنجاب کی جانب سے 19 سالہ قاسم اکرم نے ایک مرتبہ پھر اپنی باؤلنگ سے سندھ کو مشکلات میں ڈال دیا۔ اس سے قبل قاسم نے پول میچ میں بھی سندھ کو مشکلات میں ڈال کر سینٹرل پنجاب کو فتح دلوائ تھی۔

تفصیلات کے مطابق نوجوان آف سپنر قاسم اکرم جنہوں نے ایونٹ میں اپنی سپن باؤلنگ سے اچھے اچھے بلے بازوں کو مشکلات میں ڈال دیا، سیمی فائنل میچ میں بھی اپنی کارکردگی کی بدولت بازی لے گۓ۔ سینٹرل پنجاب کی جانب سے اُس موقع پر باؤلنگ کے لیے آۓ جب سندھ کا کوئ کھلاڑی آؤٹ نہیں ہوا تھا اور سندھ اچھی پوزیشن میں تھی۔ قاسم نے اپنے پہلے ہی اوور میں اِن فارم بلے باز شرجیل خان کی قیمتی وکٹ حاصل کی۔ شرجیل خان کی وکٹ حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ اُنہوں نے پاکستان شاہینز کے کپتان سعود شکیل اور دانش عزیز کو بھی پویلین کی راہ دکھائ۔

اس طرح قاسم اکرم نے زبردست باؤلنگ کی بدولت اپنے 4 اوورز میں صرف 15 رنز دے کر سندھ کے 3 کھلاڑیوں کو واپسی کی راہ دکھائ۔ ہدف کے تعاقب میں بھی قاسم اکرم کو بیٹنگ کا موقع ملا تو اُنہوں نے 8 گیندوں پر ناٹ آؤٹ 11 رنز بناۓ۔ قاسم اکرم کو بعد میں میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔

واضح رہے کہ 19 سالہ قاسم اکرم پہلے فاسٹ باؤلر تھے لیکن بعد میں اُنہوں نے آف سپن باؤلنگ کا انتخاب کیا۔ اُنہوں نے بتایا کہ بابر اعظم اور محمد حفیظ اُن کے پسندیدہ کرکٹرز ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *