بھارتی ٹیم سمجھتی ہے کہ آئی پی ایل ہی کافی ہے وہ انٹرنیشنل کرکٹ کو سنجیدگی سے نہیں لیتے، وسیم اکرم بھارتی ٹیم پر برس پڑے

Watch: 'Can't tolerate being disrespected' – Wasim Akram on not wanting to be Pakistan coach

ٹیم انڈیا کو ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ 2021 میں مایوس کن کارکردگی کی وجہ سے مختلف حلقوں سے تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

پاکستان اور نیوزی لینڈ کے خلاف بالترتیب اپنے پہلے دو میچ ہارنے کے بعد، مین ان بلیو سیمی فائنل کی دوڑ سے تقریباً باہر ہو گئی ہے جوکہ خوش آئندہ نہیں ہے کیونکہ ویرات کوہلی کی قیادت والی ٹیم نے فیورٹ کے طور پر ٹورنامنٹ میں قدم رکھا۔

تاہم، وہ توقعات پر پورا نہیں اتر سکے اور گروپ 2 کی ٹیم سٹینڈنگ میں آخری مقام پر پہنچ رہے ہیں۔ جہاں ستاروں سے بھری بیٹنگ لائن اپ بورڈ پر رنز بنانے میں ناکام رہی، وہیں تجربہ کار بولنگ اٹیک بھی ناکام رہا۔ کئی کرکٹ سٹارز کی طرح پاکستان کے سابق کپتان وسیم اکرم بھی بھارت کے خراب شو سے خوش نہیں ہیں۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ وسیم اکرم نے دعویٰ کیا کہ محدود اوورز کی بین الاقوامی کرکٹ کھیلنے میں ہندوستان کی غفلت ان کی ناکامی کی وجہ معلوم ہوتی ہے۔ لیجنڈری اسپیڈسٹر نے نشاندہی کی کہ ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ 2021 سے قبل ہندوستان کی آخری بڑی وائٹ بال سیریز مارچ میں انگلینڈ کے خلاف تھی۔ اگرچہ ہندوستانی کھلاڑیوں نے حال ہی میں ختم ہونے والی انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) 2021 میں حصہ لیا لیکن اُن کا خیال ہے کہ بین الاقوامی کرکٹ کی مشق T20 لیگز سے مختلف ہے۔

وسیم کا کہنا تھا کہ ہندوستان نے آخری بار مارچ میں تمام سینئر کھلاڑیوں کے ساتھ محدود اوورز کی سیریز کھیلی تھی۔ اب ہم نومبر میں ہیں۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ ان بین الاقوامی سیریز کو سنجیدگی سے نہیں لے رہے ہیں۔ وہ سمجھتے ہیں کہ آئی پی ایل کھیلنا کافی ہے۔

اُن کا مزید کہنا تھا کہ آپ دنیا میں اتنی ہی لیگ کرکٹ کھیلتے ہیں جو آپ چاہتے ہیں۔ لیگ کرکٹ کھیلتے ہوئے آپ کو اپوزیشن میں ایک یا دو اچھے باؤلر مل جائیں گے۔ بین الاقوامی کرکٹ میں، آپ کو پانچوں اچھے باؤلرز کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

واضح رہے کہ بھارت آج اپنے تیسرے میچ میں افغانستان سے مدمقابل ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *