رمیز راجہ کا پی سی بی سے 3 سال تک تنخواہ نہ لینے کا دعویٰ، محمد عامرکا بھی طنزیہ ردعمل آگیا، کیا کہا؟ جانیے

Ramiz Raja and Mohammad Amir

پاکستان کے سابق فاسٹ بولر محمد عامر نے ایک بار پھر ایک متنازعہ بیان دے دیا۔

بائیں ہاتھ کے تیز گیند باز نے پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے چیئرمین رمیز راجہ کے اس تبصرے پر طنز کیا کہ وہ اپنے دور میں تنخواہ کے طور پر کوئی رقم نہیں لیں گے۔ عامر نے راجہ کے دعوے کا جواب دیتے ہوئے اس حقیقت کو اجاگر کیا کہ چیئرمین پی سی بی کو ماہانہ تنخواہ نہیں ملتی بلکہ اسے بہت سارے فوائد ملتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق رمیز راجہ ، جنہوں نے پچھلے مہینے اپنی ذمہ داری سنبھالی تھی ، نے بدھ (20 اکتوبر) کو پاکستان میں کلب کے صدور سے خطاب کرتے ہوئے یہ تبصرہ کیا۔ پاکستان کے سابق کپتان کے نامور کمنٹیٹر ہونے کے ساتھ ، راجہ نے زور دے کر کہا کہ انہوں نے پاکستان کرکٹ کو آگے لے جانے کے لیے اپنا کیریئر قربان کردیا۔ راجہ نے یہ بھی کہا کہ انہیں بڑے گھر یا مہنگے اثاثے نہ ہونے پر افسوس نہیں ہے۔

رمیز راجہ کا کہنا تھا کہ میں اس کرکٹ بورڈ میں بغیر کسی تنخواہ کے آیا ہوں۔ مجھے اگلے تین سال تک ایک پیسہ بھی نہیں ملے گا۔ میں نے اس عہدے کو سنبھالنے کے لیے اپنے جاری کیریئر کو قربان کر دیا ہے۔ میرے پاس جو گاڑی ہے وہ 2008 ماڈل کی ہے۔ مجھے اس حقیقت پر افسوس نہیں کہ میرے پاس بڑا گھر یا فینسی کار یا پیسے نہیں ہیں۔ کئی بار ، آپ کو عزت کے لیے اننگز کھیلنے کی ضرورت ہوتی ہے ۔

جہاں راجہ کے الفاظ نے کرکٹ برادری کے بہت سے ممبروں کی تعریفیں حاصل کیں ، عامر نے ٹوئٹر پر جا کر 59 سالہ راجہ کو تنقید کا نشانہ بنایا۔

پی سی بی کے نئے باس کو اپنی پوسٹ میں ٹیگ کرتے ہوئے ، سپیڈسٹر نے لکھا: “میں نے جہاں تک سنا ہے پی سی بی کے چیئرمین کی ماہانہ تنخواہ نہیں ہوتی لیکن فوائد ہو سکتے ہیں۔ ماہانہ تنخواہ نہیں دی لیکن بہت سارے فوائد حاصل کیے۔عامر کا کہنا تھا کہ میں غلط ہو سکتا ہوں ، لیکن میں نے یہی سنا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *