مجھے شین بانڈ کا ایکشن بہت پسند تھا اب ان ہی کی طرح بولنگ کرنے کی کوشش کرتا ہوں، نسیم شاہ

نوجوان پاکستانی پیسر نسیم شاہ نے انکشاف کیا ہے کہ وہ نیوزی لینڈ کے شین بانڈ کے باؤلنگ ایکشن کو پسند کرتے تھے اور ہمیشہ ان کی طرح بولنگ کرنا چاہتے تھے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کی جانب سے جاری کردہ ایک ویڈیو میں 18 سالہ نسیم شاہ نے اپنے کھیل کے ابتدائی دنوں اور جدوجہد کے بارے میں بات کی۔ نسیم شاہ کا کہنا تھا کہ میں نے گھر اور گلیوں میں کرکٹ کھیلنا شروع کی تھی۔

نوجوان فاسٹ باؤلر کا کہنا تھا کہ کچھ عرصہ ٹیپ بال کرکٹ کھیلنے کے بعد لوگوں نے مجھے بتایا کہ میں تیز بولنگ کر رہا ہوں اور مجھے ہارڈ بال کرکٹ کھیلنی چاہیے۔ اس کے بعد میں نے ہارڈ بال کرکٹ کھیلنا شروع کر دی۔ میں سکول میں اور دوپہر کے کھانے کے وقفوں میں بھی کرکٹ کھیلتا تھا۔ مجھے اس کھیل میں بہت زیادہ دلچسپی تھی اور میں اسے ہر وقت کھیلنا چاہتا تھا۔

نوجوان کھلاڑی کا کہنا تھا کہ جب میں انڈر 16 کرکٹ کھیل رہا تھا تب میں نے شین بانڈ کی بولنگ دیکھی تھی۔ مجھے ان کا ایکشن بہت پسند تھا اور میں ہمیشہ ان کی طرح بولنگ کرنا چاہتا تھا۔

فاسٹ باؤلر کا مزید کہنا تھا کہ اُنہوں نے بہتر حکمت عملی سیکھنے کے لیے وقار یونس اور شعیب اختر جیسے فاسٹ بولرز کی ویڈیوز دیکھنا شروع کی تھی۔ ان کا کہنا تھا کہ میں نے اپنے لیجنڈری فاسٹ بولرز کی ویڈیوز دیکھی ہیں اور مجھے لگتا ہے کہ جارحیت ایک پیسر کے اہم عناصر میں سے ایک ہے۔

آخر میں نوجوان کھلاڑی کا کہنا تھا کہ میرے خیال میں فاسٹ بولرز کو بلے بازوں کے ساتھ مذاق نہیں کرنا چاہیے۔ ایک بلے باز کو معلوم ہونا چاہیے کہ ایک تیز گیند باز اسے باؤلنگ کرنے آرہا ہے اور یہ تقریبا جنگ کی طرح ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *